کالم

“سیاست نظریات کی بجائے اقتدار کے لالچ کى نظر”

“سیاست نظریات کی بجائے اقتدار کے لالچ کى نظر”
پاکستان کی سیاست میں بد قسمتی سے بہت کم لوگ ایسے آئے جن کو حقیقی معنوں ميں اصول پسند اور نظریاتی سیاستدان کہا جا سکے جنہوں نے اقتدار کی پرواہ کیے بغیر اپنے اصولوں پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا موجودہ ملکی سیاسى صورتحال کو پىش نظر رکھتے ہوئے اس بات کا ادراک بخوبى ہو جاتا ہے کہ اس وقت اصولوں پر چلنے والا لیڈر لانا جوئے شیر لانے کے مترادف ھے موجودہ سیاسى منظر میں ایک طرف تو بہت بڑى اپوزیشن يعنى PDM دن رات حکومت پر تنقید کے نشتر برسا رہى اور کرونا خدشات کے باوجود عمران خان کی حکومت گرانے کے لئے مختلف مقامات پر جلسے بھى کر چکى ہے لیکن ابھی تک حکومت کو کوئی بڑا چىلنج دینے میں ناکام رہى اور ابھی تک لانگ مارچ کا کوئی حتمی فیصلہ نہ کر سکى اور دوسری طرف حکومتی رہنماء بغلیں بجاتے نظر آتے ہیں کہ ہم نے PDM کو فلاپ کر دیا دیکھا جائے تو اس میں کچھ صداقت بھی نظر آئى جب ن لیگ کی طرف سے ایوان میں استعفوں کى بات کی گئی اور پیپلز پارٹی کو بیک فٹ پر جاتے دیکھا گیا گویا PDM میں شامل جماعتوں کو بھى اپنے اپنے مفادات عزیز ہیں اور عوام وہ دن بھی دیکھے گى جب یہ متحدہ اپوزیشن بکھر جائے گی اور ماضى کى طرح ایک دوسرے پر کیچڑ اچھالیں گے ملک میں معاملہ کوئی بھی ہو سیاسى جماعتیں اپنی سیاست چمکانے سے باز نہیں آتىں چاہے بات ماڈل ٹاؤن کی ہو سانحہ ساہیوال کی ہو یا حال ہی میں پیش آنے والے انتہائی افسوس ناک سانحہ مچھ کی کسى کو عوام کے دکھ کی کوئى پرواہ نہیں سب اپنی اپنی بیان بازی کریں گے اور چند دن بعد سب پہلے کی طرح ہو جائے گا اور اس کا بھی کوئی حل نہیں نکالا جائے گا اپوزیشن تو اس سانحہ کى وجہ سے عمران خان پر خوب برسى کہ انہوں نے وہاں پہنچنے میں تاخیر کی اور اعتراض قابل قبول بھی ہے اگر عمران خان اپوزیشن میں ہو تے تو حکومت کی وہ کرتے کہ کمال کر دیتےاور شاید جام کمال کو گھر بھیجنے کا مطالبہ ہى کر ڈالتے چاہے سانحہ متاثرین کو انصاف قسمت سے ہى ملتا ملک کے اس قدر بگڑے حالات میں ایک مخلص اصول پسند نظریاتی لیڈر کی ضرورت ہے جو کہ آسمان سے سیدھا نیچے نہیں اترے گا بلکہ انہیں میں سے شاید اللہ تعالیٰ کسى کو ہدایت دے دے جو صرف دعاؤں سےہى ممکن هے اور ہم تو بس دعا ہى کر سکتے ہیں
(محمود مسعود نظامى)

google.com, pub-9821533189288546, DIRECT, f08c47fec0942fa0
Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close