کرائم و کورٹس

معصوم بچوں کے سامنے ماں کی عصمت دری,شہریوں کو پیغام مل گیا,تحریر:نادر چوہدری

لاہور(نادر چوہدری)آئی جی اور سی سی پی او لاہور تبدیل ہوچکے ہیں،اپنی جان ، مال اور عزتوں کی خود حفاظت کریں، معصوم بچوں کے سامنے ماں کی عصمت دری کے واقعے سے شہریوں کو پیغام مل گیا،ڈی این اے اور شناخت پریڈکیلئے12 کے قریب مشتبہ افراد گرفتار،عموماً چند روزمتواتر تھانوں اور دفاتر میں فحش سوالات کے بعد بیشتر باعزت شہری کیس کی پیروی ختم کر دیتے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ گذشتہ شب تقریباًرات 3بجے اپنے بچوں کے سامنے درندگی کا نشانہ بننے والی ثناءبی بی کے کیس میں روائتی پیش رفت سامنے آئی ہے کہ پولیس نے تقریباً12کے قریب مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا ہے جن کی مثاترہ خاتون سے شناخت پریڈ کروائی جائے گی اور انکا ڈی این اے میچ کیا جائے گا ۔ عوامی حلقوں میں اس واقعے کو نو منتخب آئی جی پنجاب اور سی سی پی او لاہور کی تعیناتی کے ساتھ منسوب کیا جارہا ہے اور چہ مگویاں جاری ہیں کہ جب کسی صوبائی سطح کی پولیس سربراہ اور لاہور پولیس سربراہ کی سیٹوں پر ذاتی اختلافات اور میرٹ کی دھجیاں بکھیری جائیں گی تو شہریوں کی عصمت دری اور جان و مال کی لوٹ مار کوئی بڑی بات نہیں ہے ۔ نو منتخب آئی جی اور سی سی پی او لاہور کے آتے ہی اس طرح کے واقعات اور پولیس کا جائے وقوعہ کی حدود کے تعین پر باہمی اختلاف اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ اب ہر شہری خواہ وہ بچہ ہو ، بوڑھا ہو ، جوان ہو یا مرد و عورت اپنی جان مال اور عزت کا وہ خود ہی محافظ ہے ۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہمارے بوسیدہ تھانہ کلچر میں اس طرح کے کیسز جن میں متاثرہ خواتین زندہ بچ جاتی ہیں انھیں بار بار تھانوں اور دفاتر میں بلا کر وقوعے کے متعلق پوچھ پوچھ کر زخم کھریدے جاتے ہیں جس پر بیشتر باعزت شہری اس بات کو بخوبی سمجھ جاتے ہیں کہ ملزمان کی جانب سے تو ایک ہی مرتبہ وقوعہ ہوا تھا لیکن تھانوں اور دفاتر میں بار بار بلا کر پوچھ کچھ اور شناخت پریڈ وغیرہ کے نام پر روانہ کی بنیاد پرزبانی عصمت دری کی جاتی ہے جس پر اس طرح کے کیسز میں مدعیان مزید کاروائی سے انکار کردیتے ہیں جس سے پولیس کو ملزمان کی تلاش کی بجائے کیس بند کر نے کا موقع مل جاتا ہے ۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close