tickersبلاگپاکستانکرکٹ

متعصب آئی سی سی نے بابراعظم کو ٹی ٹونٹی پلیئر آف دی ایئر ایوارڈ کیلئے نظر انداز کر دیا

بابراعظم نے رواں سال 37.56 کی اوسط اور 127.56 کے سٹرائیک ریٹ سے ایک سنچری اور 9 نصف سنچری کی مدد سے 938 رنز سکور کیے

لاہور : پاکستان کے آل فارمیٹ کے کپتان بابراعظم نے 2021ء میں بھی رنز کے انبار لگائے۔

بابراعظم نے 29 ٹی ٹونٹی میچز میں 938 رنز سکور کیے اور محمد رضوان کے بعد اس سال مختصر ترین فارمیٹ میں دوسرے سب سے زیادہ رنز بنانیوالے بلے باز بنے۔

بابراعظم T20 ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ رنز بنانیوالے کھلاڑی بھی تھے جہاں انہوں نے صرف 6 اننگز میں 4 نصف سنچریوں کی مدد سے ریکارڈ 303 رنز بنائے۔

ان کے 938 رنز بھی ٹی ٹونٹی میں ایک کیلنڈر سال میں کسی بلے باز کے دوسرے سب سے زیادہ رنز ہیں۔ تاہم ایسا لگتا ہے کہ بابراعظم کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی نظر میں آنے کیلئے اس سے کہیں زیادہ کچھ کرنا پڑے گا کیونکہ گورننگ باڈی نے ٹی ٹونٹی پلیئر آف دی ایئر کیلئے اپنی نامزدگیوں میں نمبر 1 ٹی ٹونٹی بلے باز کو نظر انداز کر دیا۔

جب آئی سی سی نے بابراعظم کو ایوارڈ کیلئے نامزد کردہ کھلاڑیوں کی فہرست میں شامل نہیں کیا تو یہ کرکٹ شائقین کے لیے حیران کن تھا ۔

اس فہرست میں انگلینڈ کے جوز بٹلر، آسٹریلیا کے مچل مارش، سری لنکا کے وینندو ہاسرنگا اور پاکستان کے محمد رضوان شامل ہیں۔ وانندو ہسارنگا اور رضوان کی تو اس سال کی نامزدگیوں میں جگہ بنتی ہے لیکن یہ دلیل دی جا سکتی ہے کہ بابراعظم کو مچل مارش یا جوز بٹلر کی جگہ نامزد کیا جا سکتا تھا۔ بعض لوگوں کے خیال میں مچل مارش نے آسٹریلیا کے لیے ورلڈ کپ جیتا تھا جب کہ جوز بٹلر نے انگلینڈ کو سیمی فائنل تک پہنچایا تھا تو وہی کام بابراعظم نے بھی کیا تھا ۔

اس کے علاوہ پاکستانی کپتان کی میگا ایونٹ اور سال بھر میں کارکردگی غیر معمولی رہی ہے۔ بابراعظم نے رواں سال 37.56 کی اوسط اور 127.56 کے سٹرائیک ریٹ سے ایک سنچری اور 9 نصف سنچری کی مدد سے 938 رنز سکور کیے ہیں 

جوز بٹلر نے 65.44 کی اوسط اور 143 کے سٹرائیک ریٹ سے 1 سنچری اور 5 ففٹیز کی مدد سے 589 رنز بنائے، مچل مارش نے 36.88 کی اوسط اور 129.81 کے سٹرائیک ریٹ سے 6 نصف سنچریوں کی مدد سے 627 رنز سکور کیے ۔

اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ رواں سال بابراعظم بہترین پرفارمر رہے ہیں کیونکہ انہوں نے 1000 کے قریب ٹی ٹونٹی رنز سکور کیے ہیں۔ محمد رضوان کے علاوہ کوئی اور کھلاڑی یہ کارنامہ انجام نہیں دے سکا جس نے اس سال یہ کارنامہ انجام دیا۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close