پاکستان

خاتون زیادتی کیس، عابد کی گرفتاری کیلئے پولیس کی نئی حکمت عملی

لاہور: (کرائم رپورٹر) لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹروے پر زیادتی کیس میں تاحال فرار مرکزی ملزم عابد علی کے 6 مختلف زاویوں سے خاکے تیار کر لیے گئے ہیں۔

پولیس کی جانب سے یہ خاکے جاری کر دیئ گئے جن میں ملزم عابد علی کو مختلف روپ میں دیکھا جا سکتا ہے۔ ایک تصویر میں عابد کے بال ہٹائے گئے ہیں، ایک میں اس کو صرف مونچھوں میں دکھایا گیا، ایک خاکے میں کلین شیو رکھا گیا ہے اور ایک میں فرنچ کٹ داڑھی میں دکھایا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم ان تمام خاکوں میں سے کسی بھی روپ کو دھار سکتا ہے۔ذرائع کے مطابق ان خاکوں کا مقصد ملزم کی جلد سے جلد گرفتاری ممکن بنانا ہے۔ پولیس اس سے قبل ہی اپنے نمبرز جاری کر چکی ہے جہاں ملزم عابد علی کی اطلاع دی جا سکتی ہے۔ اس کے علاوہ ملزم کی خبر دینے والے شخص کیلئے 25 لاکھ روپے انعام بھی رکھا گیا ہے۔

واضح رہے کہ عابد علی گجرپورہ زیادتی کیس میں مرکزی ملزم ہے جو اب تک 4 مرتبہ پولیس سے بچ کر فرار ہونے میں کامیاب ہوچکا ہے۔ گزشتہ روز بھی پولیس کی نا اہلی کی وجہ سے عابد فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا تھا۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم سندھ اور کے پی کے علاقوں میں بھی آتا جاتا رہا۔ عابد جام شورو، بونیر اور ہنگو میں قیام کرتا رہا ہے۔ پولیس کا بتانا ہے کہ ملزم کی گرفتاری کیلئے ٹیمیں سندھ اور کے پی کے روانہ کر دی گئیں۔

دوسری طرف موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد کی تصویر اور معلومات لیک ہونے کی ابتدائی رپورٹ ایوان وزیراعلیٰ کو موصول ہوگئی۔ متعلقہ شخص کی نشاندہی کرلی گئی۔

ایوان وزیراعلیٰ کو موصول ہونے والی ابتدائی رپورٹ میں بتایا گیا کہ رپورٹ فرانزک ڈیپارٹمنٹ سے لیک ہوئی، رپورٹ لیک کرنے والے متعلقہ شخص کی بھی نشاندہی کرلی گئی۔

لاہور، ساہیوال، قصور کے بعد ننکانہ صاحب میں بھی پولیس کی بھاری نفری ایک بار پھر ہاتھ ملتی رہ گئی، ملزم عابد ہاتھ نہ آیا۔ ملزم اپنی سالی کے گھر آیا تھا، ساس نے 15 پر عابد سے متعلق اطلاع دی، لیکن پولیس 30 منٹ بعد پہنچی تو وہ وہیں موجود تھا، کشور بی بی کے اشارے پر ملزم تین میٹر کے فاصلے سے چکمہ دے کر فرار ہوگیا۔ پولیس کی ساری کوششیں دھری کی دھری رہ گئیں، عابد پھر ہاتھ سے نکل گیا۔

ملزم کی تلاش کیلئے پولیس نے رائے بلار پارک اور دھولر والے قبرستان میں سرچ آپریشن کیا، وہاں سے بھی کوئی کامیابی نہ ملی، 10 روز گزر گئے، موٹر وے زیادتی کا مرکزی ملزم تا حال گرفتار نہ ہوسکا جو پولیس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close